وفاقی حکومت نے بجٹ پیش کرنے کی تاریخ کا اعلان کر دیا

اسلام آباد: وفاقی حکومت نے سال 25-2024 کا بجٹ پیش کرنے کیلیے 12 جون کی تاریخ مقرر کرنے کا فیصلہ کر لیا۔

اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق کی زیرِ صدارت ہاؤس بزنس ایڈوائز ری کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں بتایا گیا کہ بجٹ اجلاس 12 جون کو 4 بجے منعقد ہوگا۔

اجلاس میں بتایا گیا کہ قومی اسمبلی کا اجلاس آج اور کل ہوگا  جبکہ اجلاس میں ہفتہ اور اتوار کو چھٹی ہوگی۔ پیر کو اجلاس کے بعد پھر ایک روز کا وقفہ ہوگا۔

بدھ کو وزیر خزانہ محمد اورنگزیب بجٹ پیش کریں گے جبکہ بجٹ پیش ہونے کے بعد اجلاس عید کے بعد ہوگا۔

چند روز قبل اے آر وائی نیوز نے اپنی خبر میں وفاقی بجٹ 10 کے بجائے 12 جون کو پیش کیے جانے کا امکان ظاہر کیا تھا۔

ذرائع نے بتایا تھا کہ بجٹ پیش کرنے کی اب تک کوئی حتمی تاریخ نہیں، 10 جون کو فنانس بل پیش ہونے کی تیاری کی گئی تھی لیکن پارلیمنٹ کو اب 12 جون کو فنانس بل پیش کرنے کا عندیہ دیا گیا۔

قومی اقتصادی کونسل کا اجلاس 10 جون کو پیش ہونے اور قومی اقتصادی سروے 11 جون کو پیش کیے جانے کا امکان ہے۔

بجٹ کی منظوری کیلیے سینیٹ کی قائمہ کمیٹی بنائے جانے کا امکان ہے اور سینیٹ سے بجٹ کی منظوری 26 جون تک لیے جانے کی توقع ہے۔

بجٹ میں وفاق کے اخراجات کا ابتدائی تخمینہ 16 ہزار 700 ارب روپے ہو سکتا ہے جس میں سود اور قرضوں پر اخراجات کا تخمینہ 9 ہزار 700 ارب روپے لگایا گیا ہے۔

بجٹ میں ٹیکس آمدن کا ابتدائی تخمینہ 11 ہزار ارب روپے سے زائد ہو سکتا ہے جس میں ڈائریکٹ ٹیکسز کی مد میں 5300 ارب روپے جمع ہونے کا امکان ہے جبکہ 680 ارب روپے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں جمع ہونے کا امکان ظاہر کیا گیا ہے۔

اس کے علاوہ بجٹ میں سیلز ٹیکس سے 3850 ارب روپے سے زائد، کسٹم ڈیوٹی مد میں 1100 ارب روپے سے زائد جمع ہونے کا امکان ہے جبکہ نان ٹیکس آمدن کا ابتدائی تخمینہ 2100 ارب روپے ہو سکتا ہے۔

Comments





Source link

اپنا تبصرہ لکھیں